پیر, دسمبر 7, 2015

خفیہ گروپ سے سیکسی گروپ کا سفر

دو دن پیشتر ایک ہمارے مہربان اور نیک نام فیس بکی دوست نے اپنے خفیہ سیکسی گروپ میں ہمیں داخلہ دے دیا۔۔۔ کیا دیکھتے ہیں کہ تقریبا ڈھائی ہزار کے اس سیکسی گروپ میں بڑے بڑے جیّد عالم فاضل ، ڈاکٹر ، حکیم ، ہومیو پیتھک کے ماہر میرے جیسے اناڑی لوگوں کو سیکس کی تعلیم و تربیت دینے کے لئے ہمہ وقت موجود ہیں ۔ لڑکیاں بالیاں بھی کھلم کھلا اپنے اپنے گھمگیر مسائل لئے لائن میں لگی نظر آرہی تھیں جس سے وہاں کے ماحول کی رنگینی میں عجیب سی عاشقانہ اور جنسیانہ خوشبو پھیلی ہوئی تھی ۔

ہم نے سوچا اب آ ہی گئے ہیں تو ایک آدھ مسلہ ہم بھی پوچھ لیں تاکہ زندگی اور آسان ہوجائے۔۔۔ ہم نے جو مسلہ پوچھا وہ ہمارے نیک نام فیسبکی دوست کو غالبا پسند نہیں آیا اور اسی وجہ سے شاید انہوں نے اپنے خفیہ گروپ سے ہمیں باہر دھکیلنے میں ہی عافیت جانی ۔

فیسبکی سیکسی گروپ سے تو ہم باہر ہوگئے مگر وہ جو آدھ سے پون گھنٹہ ہم نے سیکسی گروپ میں گزارا اس کو فیس بک کے عالموں نے ہمارا ٹھرک پن اور عادت جان لیا۔اب اس دن سے ہماری وال پر ننگی تصویروں والی پروفائل ، پیج اور گروپس کو ایڈ کرنے کی تجویز اور تحریک دی جارہی ہے ۔ کسی لڑکی کا نام جانو گشتی ہے تو کسی کا گشتی رنڈی ۔۔۔کسی پیج کا نام آؤ مزے لوٹیں ہے تو کسی گروپ کا نام کنواری لڑکیاں۔۔۔۔۔۔۔
سوچ رہا ہوں چلو میں تو گناہگار ہوگیا ،۔۔۔ اب جس شریف النفس دوست نے مجھے اپنے سیکسی گروپ میں ایڈ کیا تھا اس کا کیا بنے گا۔۔۔۔۔

یاد رہے کہ سوشل میڈیا خاص کر فیس بک پر ایسے سینکڑوں خفیہ گروپ موجود ہیں جن تک کسی کی رسائی ممکن نہیں اور یہ گروپ زیادہ تر سیکس اور دوسری غیر قانونی سرگرمیوں کے لئے استمال کئے جارہے ہیں ۔۔۔دیکھا یہ بھی گیا ہے بہت سے کرمنل لوگ فیس بک پر اپنی سادہ سی پروفائل بنا کر پیغام رسانی کے لئے عام گروپس یا خفیہ گروپس کے استمال کو ترجحیح دیتے ہیں